اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور کے زیر اہتمام دسویں بین الاقوامی سیرت النبی ﷺکانفرنس کا انِقعاد وہیل چیئر ایشیا کپ: سری لنکن ٹیم کی فتح حکومت کا نیب ترمیمی بل کیس کے فیصلے پر نظرثانی اور اپیل کرنے کا فیصلہ واٹس ایپ کا ایک نیا AI پر مبنی فیچر سامنے آگیا ۔ جناح اسپتال میں 34 سالہ شخص کی پہلی کامیاب روبوٹک سرجری پی ایس او اور پی آئی اے کے درمیان اہم مذاکراتی پیش رفت۔ تحریِک انصاف کی اہم شخصیات سیاست چھوڑ گئ- قومی بچت کا سرٹیفکیٹ CDNS کا ٹاسک مکمل ۔ سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ کے خلاف دائر درخواستوں پر آج سماعت ہو گی ۔ نائیجیریا ایک بے قابو خناق کی وبا کا سامنا کر رہا ہے۔ انڈونیشیا میں پہلی ’بلٹ ٹرین‘ نے سروس شروع کر دی ہے۔ وزیر اعظم نے لیفٹیننٹ جنرل منیرافسر کوبطورچیئرمین نادرا تقرر کرنے منظوری دے دی  ترکی کے دارالحکومت انقرہ میں وزارت داخلہ کے قریب خودکش حملہ- سونے کی قیمت میں 36 ہزار روپے تک گر گئی۔ پنجاب حکومت کا بیوروکریسی کے تبادلے نہ کرنے کا فیصلہ کارل سیگن (1934 – 1996) ایک عظیم سائنسدان فالج کے اٹیک سے پوری عمر کی معذوری ہونے سے بچائیں ڈیپارٹمنٹ آف ہارٹیکلچر فیکلٹی آف ایگریکلچر اینڈ انوائر منٹ اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور اور پاکستان سوسائٹی آف ہارٹیکلچر سائنسز کے زیر اہتمام8ویں دو روزہ انٹرنیشنل کانفرنس آل پاکستان انٹرورسٹی ریسلنگ چیمپئن شپ، اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور نے 4 کانسی اور1چاندی کامیڈل جیت لیا صدرمملکت کی منظوری کے بغیر ہی قومی اسمبلی کا اجلاس کل صبح 10 بجے طلب، نوٹیفکیشن جاری ملتان ریجن میں بجلی چوروں اور نادہندگان کے خلاف آپریشن جاری نگران وزیراعظم انوارالحق کاکڑ بلوچ لاپتہ افراد کیس میں اسلام آباد ہائیکورٹ پیش ہو گئے یادداشت کوتیز کرنے کیلئےمفید مشقیں وفاقی محتسب بہاولپورریجن میں واپڈا سمیت دیگرمحکموں کیخلاف شکایات پرعوام کو25 لاکھ روپے کاریلیف مل گیا

الیکشن دھاندلی کیس سپریم کورٹ نے قاسم سوری کو طلب کر لیا

یوتھ ویژن : شہزاد حُسین بھٹی بیورو چیف رحیم یار خاں سے سپریم کورٹ نے سابق ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی اور پی ٹی آئی رہنما قاسم سوری کو آئندہ ماہ منگل کو ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا اور ساتھ ہی سپریم کورٹ کے رجسٹرار سے 2018 کے انتخابات میں دھاندلی کا الزام لگانے والی درخواست پر رپورٹ بھی طلب کر لی۔

چیف جسٹس آف پاکستان قاضی فائز عیسیٰ نے پانچ سال تک کیس درج نہ ہونے پر استثنیٰ لیتے ہوئے جب کہ سوری نے ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی کے عہدے اور مراعات حاصل کیں، چیف جسٹس پاکستان قاضی فائز عیسیٰ نے سوال کیا کہ عدالت سابق ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی کے خلاف غداری کے مقدمے میں سنگین کارروائی کیوں نہ کرے۔ نااہلی کیس میں رکن اسمبلی اور پی ٹی آئی رہنما۔

شرجیل نے مسلم لیگ ن پر بیک ڈور ڈیل، منفی سیاست کا الزام لگایا

چیف جسٹس عیسیٰ کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے سوری کے خلاف مبینہ انتخابی دھاندلی کیس کی سماعت کی اور انہیں آئندہ سماعت تک تحریری جواب جمع کرانے کی ہدایت بھی کی۔

عدالت نے اس حوالے سے رجسٹرار آفس سے جواب بھی طلب کرلیا۔

بلوچستان نیشنل پارٹی (بی این پی) کے رہنما نوابزادہ لشکری ​​رئیسانی کی نمائندگی کرنے والے وکیل نے استدلال کیا کہ سوری نے ڈپٹی اسپیکر کا عہدہ ‘غیر قانونی طور پر’ سنبھالا کیونکہ انہوں نے اپنے فائدے کے لیے سابق اسٹے آرڈر کا استعمال کیا۔ انہوں نے عدالت پر زور دیا کہ وہ تمام مراعات اور مراعات واپس لے جن کا سوری حقدار ہے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ سوری ملک میں موجودہ آئینی بحران پیدا کرنے میں ملوث ہیں اور پی ٹی آئی کے قانون ساز کے خلاف کارروائی کا اشارہ دیا۔

وکیل نعیم بخاری نے کہا کہ سوری کے کیسز کو عدالت نے دیگر کیسز کے ساتھ ملا دیا ہے۔

حکم امتناعی لینے کے بعد کیس کو سماعت کے لیے مقرر کرنے کی اجازت نہیں دی گئی اور سپریم کورٹ کے اندرونی نظام سے ہیرا پھیری کی گئی۔ میں 1982 سے وکیل ہوں، اتنے عرصے تک کیس کیوں طے نہیں ہوا؟ جب اسمبلی تحلیل ہو گئی تو کیا وہ اسٹے آرڈر کو اپنے فائدے کے لیے استعمال کر رہا ہے؟

سوری کے وکیل بخاری نے جواب دیا کہ وہ اس وقت بھی حکم امتناعی کے پابند تھے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ان کی رائے میں قانون ساز کی نااہلی اور دوبارہ انتخاب اب ‘غیر موثر’ ہو چکا ہے۔

چیف جسٹس نے پھر پوچھا کہ کیا سپریم کورٹ میں مقدمہ دائر کرنے سے بچنے کے لیے یہی حربہ استعمال کیا گیا؟ یہ بتاتے ہوئے کہ اگر اس طرح کے تضادات سامنے آتے ہیں تو عدالت کو 2018 کے پورے انتخابی عمل کو ‘دیکھنا’ پڑ سکتا ہے۔ اس کے بعد انہوں نے بخاری سے پوچھا کہ سوری نے اپنے عہدے سے استعفیٰ کب دیا؟

’’قاسم سوری نے 16 اپریل 2022 کو استعفیٰ دے دیا،‘‘ بخاری نے جواب دیا۔

سوری نے غیر قانونی طور پر اسمبلی تحلیل کی، پانچ رکنی بنچ کے فیصلے میں آرٹیکل 6 کے تحت سنگین غداری کا مقدمہ چلانے کی سفارش کی گئی، کیا ہم سوری کے خلاف غداری کا مقدمہ شروع نہیں کریں گے؟ ایکشن لیا جائے، جو بھی آئین کی خلاف ورزی کرے گا اسے نتائج بھگتنا ہوں گے، چیف جسٹس نے کہا۔

عدالت نے کیس ٹھیک نہ کرنے پر رجسٹرار کو نوٹس جاری کرتے ہوئے تین ہفتوں میں رپورٹ بھی طلب کرلی۔

سوری پر 2018 کے انتخابات کے دوران این اے 265 میں انتخابات میں دھاندلی کا الزام تھا اور رئیسانی نے تحقیقات کی درخواست کے ساتھ سوری کی جیت کو چیلنج کیا تھا۔

الیکشن ٹریبونل نے الیکشن کو کالعدم قرار دیتے ہوئے دوبارہ انتخابات کرانے کا مطالبہ کیا تھا جس کے بعد سوری نے اس فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا تھا۔

بعد ازاں اس وقت کے چیف جسٹس عمر عطا بندیال نے ٹربیونل کے فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے سوری کو ڈپٹی سپیکر کے عہدے پر بحال کر دیا اور دوبارہ انتخابات کے خلاف حکم امتناعی جاری کر دیا۔

50% LikesVS
50% Dislikes
WP Twitter Auto Publish Powered By : XYZScripts.com