اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور کے زیر اہتمام دسویں بین الاقوامی سیرت النبی ﷺکانفرنس کا انِقعاد وہیل چیئر ایشیا کپ: سری لنکن ٹیم کی فتح حکومت کا نیب ترمیمی بل کیس کے فیصلے پر نظرثانی اور اپیل کرنے کا فیصلہ واٹس ایپ کا ایک نیا AI پر مبنی فیچر سامنے آگیا ۔ جناح اسپتال میں 34 سالہ شخص کی پہلی کامیاب روبوٹک سرجری پی ایس او اور پی آئی اے کے درمیان اہم مذاکراتی پیش رفت۔ تحریِک انصاف کی اہم شخصیات سیاست چھوڑ گئ- قومی بچت کا سرٹیفکیٹ CDNS کا ٹاسک مکمل ۔ سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ کے خلاف دائر درخواستوں پر آج سماعت ہو گی ۔ نائیجیریا ایک بے قابو خناق کی وبا کا سامنا کر رہا ہے۔ انڈونیشیا میں پہلی ’بلٹ ٹرین‘ نے سروس شروع کر دی ہے۔ وزیر اعظم نے لیفٹیننٹ جنرل منیرافسر کوبطورچیئرمین نادرا تقرر کرنے منظوری دے دی  ترکی کے دارالحکومت انقرہ میں وزارت داخلہ کے قریب خودکش حملہ- سونے کی قیمت میں 36 ہزار روپے تک گر گئی۔ پنجاب حکومت کا بیوروکریسی کے تبادلے نہ کرنے کا فیصلہ کارل سیگن (1934 – 1996) ایک عظیم سائنسدان فالج کے اٹیک سے پوری عمر کی معذوری ہونے سے بچائیں ڈیپارٹمنٹ آف ہارٹیکلچر فیکلٹی آف ایگریکلچر اینڈ انوائر منٹ اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور اور پاکستان سوسائٹی آف ہارٹیکلچر سائنسز کے زیر اہتمام8ویں دو روزہ انٹرنیشنل کانفرنس آل پاکستان انٹرورسٹی ریسلنگ چیمپئن شپ، اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور نے 4 کانسی اور1چاندی کامیڈل جیت لیا صدرمملکت کی منظوری کے بغیر ہی قومی اسمبلی کا اجلاس کل صبح 10 بجے طلب، نوٹیفکیشن جاری ملتان ریجن میں بجلی چوروں اور نادہندگان کے خلاف آپریشن جاری نگران وزیراعظم انوارالحق کاکڑ بلوچ لاپتہ افراد کیس میں اسلام آباد ہائیکورٹ پیش ہو گئے یادداشت کوتیز کرنے کیلئےمفید مشقیں وفاقی محتسب بہاولپورریجن میں واپڈا سمیت دیگرمحکموں کیخلاف شکایات پرعوام کو25 لاکھ روپے کاریلیف مل گیا

ضیاء محی الدین کی پہلی برسی

یوتھ ویژن : علی رضا ابراہیم غوری سے "ضیاء محی الدین کو یاد کرنا: ان کی پہلی برسی پر مشہور شاعر کو خراج تحسین”


"ایک دلی خراج عقیدت کے طور پر، ضیا محی الدین کو ان کی لازوال میراث کے لیے بعد از مرگ تعریفیں ملتی ہیں، جہاں ان کی شاعری اور آواز ہماری یادوں میں ایک خاص مقام رکھتی ہے۔”
آج نامور شاعر ضیا محی الدین کی پہلی برسی ہے، جن کے گہرے اشعار اور دل موہ لینے والی آواز بہت سے لوگوں کے دلوں میں گونجتی رہتی ہے۔ ان کی پائیدار میراث کو خراج تحسین پیش کرنے کے طور پر، زندگی کے تمام شعبوں سے مداح ادب اور فن میں ان کی شراکت کا احترام کرنے کے لیے جمع ہوتے ہیں۔

ضیا محی الدین کی شاعری بے مثال گہرائی اور حساسیت کے ساتھ محبت، نقصان اور انسانی حالت کے موضوعات کو چھوتی ہوئی حدوں کو عبور کرتی ہے۔

اس کی طاقتور تلاوت نے ایک انمٹ تاثر چھوڑا، ایسے جذبات کو ابھارا جو ہمارے اجتماعی شعور میں موجود ہیں۔ اگرچہ وہ اس دنیا سے چلا گیا ہے، اس کے الفاظ ان کی شاندار اور فنکارانہ یاد دہانی کے طور پر لازوال رہیں گے. آج، جب ہم اپنا احترام کرتے ہیں، ہم ان کے ادبی ورثے کے تحفظ کے لیے اپنے عزم کا اعادہ کرتے ہیں اور اس بات کو یقینی بناتے ہیں کہ ان کی آواز آنے والی نسلوں کو متاثر کرتی رہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes
WP Twitter Auto Publish Powered By : XYZScripts.com