اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور کے زیر اہتمام دسویں بین الاقوامی سیرت النبی ﷺکانفرنس کا انِقعاد وہیل چیئر ایشیا کپ: سری لنکن ٹیم کی فتح حکومت کا نیب ترمیمی بل کیس کے فیصلے پر نظرثانی اور اپیل کرنے کا فیصلہ واٹس ایپ کا ایک نیا AI پر مبنی فیچر سامنے آگیا ۔ جناح اسپتال میں 34 سالہ شخص کی پہلی کامیاب روبوٹک سرجری پی ایس او اور پی آئی اے کے درمیان اہم مذاکراتی پیش رفت۔ تحریِک انصاف کی اہم شخصیات سیاست چھوڑ گئ- قومی بچت کا سرٹیفکیٹ CDNS کا ٹاسک مکمل ۔ سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ کے خلاف دائر درخواستوں پر آج سماعت ہو گی ۔ نائیجیریا ایک بے قابو خناق کی وبا کا سامنا کر رہا ہے۔ انڈونیشیا میں پہلی ’بلٹ ٹرین‘ نے سروس شروع کر دی ہے۔ وزیر اعظم نے لیفٹیننٹ جنرل منیرافسر کوبطورچیئرمین نادرا تقرر کرنے منظوری دے دی  ترکی کے دارالحکومت انقرہ میں وزارت داخلہ کے قریب خودکش حملہ- سونے کی قیمت میں 36 ہزار روپے تک گر گئی۔ عارف علوی کا اہم بیان بانی پی ٹی آئی صرف بااختیار لوگوں سے بات چیت چاہتے ہیں بلوچستان واشک میں کوئٹہ جانے والی بس کھائی میں گرنے سے 28 افراد جاں بحق 22 زخمی حکومت نے بجٹ 2024-25 میں امیروں کے لیے ٹیکس معافی واپس لینے کی تجویز پر غور کرنا شروع کردیا طوفانی بارشوں کے بعد کان کے تباہ ہونے سے 12 بھارتی ہلاک ہو گئے نیوکلیئر پاور کے حوالے سے پاکستان کی 26 سالہ یادگاری تقریب۔ اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور میں آئندہ بجٹ پر انڈسٹری اور اکیڈمیا ڈائیلاگ پیشانی کو جھوٹی و خطاء کار کیوں کہا گیا؟ بہاولپور میں باپ کے ہاتھوں کمسن بچیاں قتل خانہ کعبہ کا سونے کا دروازہ ۔ رحمت کا پرنالا اور حجر اسود پر چاندی کا خول چڑھانے کے اعزاز بھی بہاولپور کے حصے میں آیا خانہ کعبہ کے دروازے اور حجر اسود کا خول تیار کرنے والی فیکٹری کے پاکستانی مالک خالق حقیقی سے جاملے

وزیر اعظم شہباز اور ولی عہد سلمان نے پاکستان میں 5 ارب ڈالر کی سعودی سرمایہ کاری کو تیز کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

وزیر اعظم شہباز اور ولی عہد سلمان نے پاکستان میں 5 ارب ڈالر کی سعودی سرمایہ کاری کو تیز کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

پاکستان میں 5 ارب ڈالر کی سعودی سرمایہ کاری

یوتھ ویژن : ثاقب ابراہیم غوری سے وزیر اعظم شہباز اور ولی عہد سلمان نے پاکستان میں 5 ارب ڈالر کی سعودی سرمایہ کاری کو تیز کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

دونوں ممالک کی جانب سے جاری مشترکہ بیان کے مطابق، وزیراعظم شہباز شریف اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے پاکستان کے لیے 5 ارب ڈالر کے سعودی سرمایہ کاری پیکج کی پہلی لہر کو تیز کرنے پر اتفاق کیا ہے۔

دونوں رہنماؤں نے ایک روز قبل وزیر اعظم کے انتخاب کے بعد اپنے پہلے غیر ملکی دورے میں سعودی عرب کے دورے کے دوران ملاقات کی تھی۔

گزشتہ سال جنوری میں، ولی عہد نے سعودی ترقیاتی فنڈ (SDF) کو اسٹیٹ آف بینک آف پاکستان (SBP) میں جمع رقم کو 5 بلین ڈالر تک بڑھانے کا مطالعہ کرنے کی ہدایت کی تھی۔

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق اس اقدام نے پاکستان اور اس کے "بہن بھائیوں” کی معیشت کو سپورٹ کرنے پر سعودی عرب کے موقف کی تصدیق کی۔

ستمبر 2023 میں اس وقت کے نگراں وزیر اعظم انوار الحق کاکڑ نے کہا تھا کہ سعودی عرب آئندہ دو سے پانچ سالوں میں پاکستان میں مختلف شعبوں میں 25 ارب ڈالر تک کی سرمایہ کاری کرے گا۔

اپنی سرکاری رہائش گاہ پر صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کاکڑ نے کہا کہ سعودی عرب کی سرمایہ کاری کان کنی، زراعت اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبوں میں آئے گی اور یہ پاکستان میں براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کو بڑھانے کے لیے ایک کوشش کا حصہ ہے۔

سال 2024 کا وزیراعظم محمد شہباز شریف کا اپنے وفد کے ہمراہ عمرے کی ادائیگی

آج جاری کردہ ایک مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ وزیر اعظم اور ولی عہد کی بات چیت کا مرکز دونوں ممالک کے درمیان برادرانہ تعلقات کو مضبوط بنانے اور مختلف شعبوں میں تعاون کو بڑھانے کے مواقع تلاش کرنے پر تھا۔

"پاکستان کی معیشت میں مملکت کے معاون کردار اور تجارتی اور سرمایہ کاری کے تعلقات کو مضبوط بنانے کی باہمی خواہش پر زور دیا گیا۔ دونوں جماعتوں نے 5 بلین ڈالر مالیت کے سرمایہ کاری پیکج کی پہلی لہر کو تیز کرنے کے لیے اپنے عزم کا اعادہ کیا جس پر پہلے تبادلہ خیال کیا گیا تھا۔

اس میں کہا گیا ہے کہ دونوں رہنماؤں نے غزہ کی صورتحال سمیت باہمی دلچسپی کی علاقائی اور عالمی پیش رفت پر بھی تبادلہ خیال کیا۔

وزیر اعظم شہباز اور سعودی ولی عہد نے غزہ میں اسرائیلی فوجی کارروائیوں کو روکنے اور انسانی اثرات کو کم کرنے کے لیے بین الاقوامی کوششوں پر زور دیا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ انہوں نے بین الاقوامی برادری پر اسرائیل پر دباؤ ڈالنے کی ضرورت پر بھی زور دیا کہ وہ دشمنی بند کرے، بین الاقوامی قانون کی پاسداری کرے اور غزہ تک انسانی امداد کی بلا روک ٹوک رسائی میں سہولت فراہم کرے۔

"انہوں نے [اقوام متحدہ] سلامتی کونسل اور جنرل اسمبلی کی متعلقہ قراردادوں کے ساتھ ساتھ عرب امن اقدام کے مطابق امن عمل کو آگے بڑھانے کی ضرورت پر تبادلہ خیال کیا جس کا مقصد ایک آزاد فلسطینی ریاست کے قیام کے لیے ایک منصفانہ اور جامع حل تلاش کرنا ہے۔ مشرقی یروشلم اس کا دارالحکومت ہے،” بیان میں کہا گیا ہے۔

دونوں فریقوں نے خطے میں امن و استحکام کو یقینی بنانے کے لیے دونوں ممالک کے درمیان دیرینہ مسائل بالخصوص مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے پاکستان اور بھارت کے درمیان بات چیت کی اہمیت پر بھی زور دیا۔

وزیراعظم شہباز شریف نے ولی عہد کو جلد از جلد پاکستان کے سرکاری دورے کی دعوت دی جسے سعودی ولی عہد نے قبول کر لیا۔

ولی عہد نے شہباز شریف کو عہدہ سنبھالنے پر مبارکباد بھی دی اور "ان کی مدت ملازمت کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا”۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ وزیر اعظم نے بدلے میں "مملکت کی ثابت قدمی اور مہمان نوازی پر شکریہ ادا کیا، اور دوطرفہ تعلقات اور اقتصادی تعاون کو فروغ دینے کے لیے پاکستان کے عزم کا اعادہ کیا”۔

سعودی عرب جانے والے پاکستانی وفد میں وزیر خارجہ اسحاق ڈار، وزیر دفاع خواجہ آصف، وزیر اطلاعات عطاء اللہ تارڑ، وزیر خزانہ محمد اورنگزیب اور وزیر اعلیٰ پنجاب مریم نواز شریف شامل تھے۔

مزید خبروں اور معلومات کے لیے ہمیں FacebookTwitter ,Instagram , Linkedin,پر فالو کریں-

50% LikesVS
50% Dislikes
WP Twitter Auto Publish Powered By : XYZScripts.com