Your theme is not active, some feature may not work. Buy a valid license from stylothemes.com
روزنامہ یوتھ ویژن کی جانب سے تمام اہل اسلام کو دل کی اتہا گہرائیوں سے عیدالفطر 2024 مبارک ہو اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور کے زیر اہتمام دسویں بین الاقوامی سیرت النبی ﷺکانفرنس کا انِقعاد وہیل چیئر ایشیا کپ: سری لنکن ٹیم کی فتح حکومت کا نیب ترمیمی بل کیس کے فیصلے پر نظرثانی اور اپیل کرنے کا فیصلہ واٹس ایپ کا ایک نیا AI پر مبنی فیچر سامنے آگیا ۔ جناح اسپتال میں 34 سالہ شخص کی پہلی کامیاب روبوٹک سرجری پی ایس او اور پی آئی اے کے درمیان اہم مذاکراتی پیش رفت۔ تحریِک انصاف کی اہم شخصیات سیاست چھوڑ گئ- قومی بچت کا سرٹیفکیٹ CDNS کا ٹاسک مکمل ۔ سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ کے خلاف دائر درخواستوں پر آج سماعت ہو گی ۔ نائیجیریا ایک بے قابو خناق کی وبا کا سامنا کر رہا ہے۔ انڈونیشیا میں پہلی ’بلٹ ٹرین‘ نے سروس شروع کر دی ہے۔ وزیر اعظم نے لیفٹیننٹ جنرل منیرافسر کوبطورچیئرمین نادرا تقرر کرنے منظوری دے دی  ترکی کے دارالحکومت انقرہ میں وزارت داخلہ کے قریب خودکش حملہ- سونے کی قیمت میں 36 ہزار روپے تک گر گئی۔ بھارت کے ساتھ 5 بلین ڈالر کی تجارت معطل اسحاق ڈار نے وجہ بتا دی ملکی تاریخ میں پہلی دفعہ صوبے بھر کے سرکاری سکولوں کے لاکھوں بچوں نے اپنے 60,000 نمائندے منتخب کر لیے کرغزستان میں پاکستانی طلباء کو ہجومی تشدد کے واقعات ‘انتہائی تشویشناک’ گھروں کے اندر رہنے کا مشورہ دے دیا عمر ایوب نے بانی پی ٹی آئی کے 7 مقدمات کو مسترد کرتے ہوئے ‘چوری شدہ نشستوں’ کی واپسی پر بات چیت کی ہے ایلون مسک کا بڑا اعلان ٹویٹر X.com بن گیا قومی اسمبلی نے پی ٹی آئی کی زرتاج گل کے خلاف اعتراض پر ن لیگ کے طارق بشیر چیمہ کو موجودہ اجلاس کے لیے معطل کر دیا سپریم کورٹ نے عدلیہ کے خلاف ریمارکس پر فیصل واوڈا اور مصطفیٰ کمال کو شوکاز نوٹس جاری کر دیئے ٹائمز ہائر ایجوکیشن ینگ یونیورسٹی رینکنگ 2024 نے 33 پاکستانی اداروں کو تسلیم کیا ہے جن میں اسلامیہ یونیورسٹی آف بہاولپور بھی شامل ہے، تعلیم اور تحقیق میں ان کی شاندار کارکردگی پر اپنی فہرست جاری کردی نیب قوانین کی سماعت جس میں عمران خان کو شامل کیا گیا ہے، 2 مزیدکیسیزمیں سزا معطل پی ٹی آئی جو تبلیغ کرتی ہے اس پر عمل نہیں کرتی، بلاول بھٹو

طالبان نے حکومت پاکستان کو ‘بہت برے نتائج’ سے خبردار کردیا

یوتھ ویژن : منیب علوی سے افغانستان کے طالبان نے پیر کو کہا کہ پاکستان نے افغان سرزمین پر دو فضائی حملے کیے، جس میں پانچ خواتین اور تین بچے ہلاک ہوئے، ترجمان نے حملوں کی مذمت کرتے ہوئے اسے خودمختاری کی خلاف ورزی قرار دیا۔

یوتھ ویژن نیوز کے مطابق حملے ایسے وقت ہوئے جب پڑوسیوں نے پاکستان میں حالیہ عسکریت پسندوں کے حملوں کی ذمہ داری کا سودا کیا ہے، جن کا کہنا ہے کہ وہ افغان سرزمین سے کیے گئے تھے، حالانکہ افغانستان کے حکمران طالبان اس کی تردید کرتے ہیں۔

طالبان انتظامیہ کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے ایک بیان میں کہا کہ امارت اسلامیہ افغانستان کسی کو بھی افغان سرزمین استعمال کرکے سلامتی سے سمجھوتہ کرنے کی اجازت نہیں دیتی۔

انہوں نے مزید کہا کہ مشرقی سرحدی صوبوں خوست اور پکتیکا میں حملوں میں پانچ خواتین اور تین بچے ہلاک ہوئے۔

آئی ای اے کے ترجمان نے کہا کہ ’’گزشتہ رات تقریباً 3 بجے پاکستانی طیاروں نے شہریوں کے گھروں پر بمباری کی‘‘۔ انہوں نے مزید کہا کہ بم دھماکوں کے نتیجے میں پکتیکا میں تین خواتین اور تین بچوں سمیت چھ شہری جاں بحق ہوئے جبکہ صوبہ خوست میں ایک مکان گرنے سے مزید دو خواتین اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھیں۔

صوبہ پکتیکا پاکستان کے جنوبی وزیرستان ضلع کے قریب واقع ہے جبکہ خوست شمالی وزیرستان کے قریب واقع ہے۔

مجاہد نے دعویٰ کیا کہ "عبداللہ شاہ نامی شخص، جس کے بارے میں پاکستانی دعویٰ کرتا ہے کہ اس واقعے میں نشانہ بنایا گیا تھا، وہ پاکستان میں ہے، دوسری طرف اس خطے کے دونوں جانب ایک قبیلہ آباد ہے جس کے روزانہ دوروں اور قریبی تعلقات ہیں”۔

پاکستان نے اقوام متحدہ کی اسلامو فوبیا سے متعلق قرارداد کا خیر مقدم

طالبان کے ترجمان نے کہا کہ امارت اسلامیہ افغانستان ان حملوں کی شدید مذمت کرتی ہے اور اس لاپرواہی کی کارروائی کو افغانستان کی سرزمین کی خلاف ورزی قرار دیتی ہے اور متنبہ کیا ہے کہ افغانستان کی عبوری حکومت جو کہ "دنیا کی سپر پاورز کے خلاف جدوجہد آزادی کا طویل تجربہ” رکھتی ہے۔ کسی کو بھی اپنے علاقے پر حملہ کرنے کی اجازت نہیں دیتا۔

ترجمان نے نئی حکومت پر بھی زور دیا کہ وہ غلط پالیسیوں کے "تسلسل” کو روکے جس سے "دوسروں کو فائدہ” پہنچتا ہے اور دونوں ممالک کے درمیان تعلقات خراب ہوتے ہیں۔

ترجمان نے کہا کہ مجاہد نے ایسے واقعات کے ممکنہ سنگین نتائج کے بارے میں خبردار کرتے ہوئے خبردار کیا کہ اس کے اثرات پاکستان کے کنٹرول سے باہر ہو سکتے ہیں، "اس طرح کے واقعات کے بہت برے نتائج ہو سکتے ہیں جو پاکستان کے کنٹرول سے باہر ہو جائیں گے،” ترجمان نے کہا۔

طالبان نے مزید زور دیا کہ IEA کسی بھی ایسے اقدام کو "برداشت نہیں کرے گا” جس سے اس کی سرحدوں کے اندر افراد کی حفاظت کو خطرہ ہو۔

یہ فضائی حملہ اس وقت ہوا جب صدر آصف علی زرداری نے شمالی وزیرستان میں سکیورٹی فورسز کی ایک چوکی پر دہشت گردوں کے حملے میں دو افسران سمیت سات فوجیوں کی ہلاکت کے بعد جوابی کارروائی کا وعدہ کیا۔

شمالی وزیرستان کے علاقے میر علی میں ہفتے کے روز دہشت گردوں کے حملے میں شہید ہونے والے سات فوجیوں میں ایک لیفٹیننٹ کرنل اور ایک کیپٹن شامل ہیں۔

آئی ایس پی آر کے مطابق، فوجیوں نے دن کے اوقات میں فوجی تنصیب میں دراندازی کی ابتدائی کوشش کو ناکام بنا دیا تاہم چھ دہشت گردوں کے ایک گروپ نے بارود سے بھری گاڑی اس میں ٹکرا دی، بعد ازاں متعدد خودکش دھماکے کیے گئے۔

حملوں کے نتیجے میں ایک عمارت کا ایک حصہ گر گیا، جس کے نتیجے میں پانچ بہادر فوجیوں کی شہادت ہوئی۔

شہید ہونے والے فوجیوں میں حوالدار صابر، جو ضلع خیبر کا رہائشی تھا۔ ضلع لکی مروت کے رہائشی نائیک خورشید؛ سپاہی ناصر، پشاور کا رہائشی؛ کوہاٹ کے رہائشی سپاہی راجہ؛ اور سپاہی سجاد جو کہ ایبٹ آباد کا رہائشی ہے۔

آنے والے کلیئرنس آپریشن کے دوران، پاکستانی فوج کے دستوں نے لیفٹیننٹ کرنل سید کاشف علی کی قیادت میں تمام چھ دہشت گردوں کو مار گرایا۔ تاہم کراچی کے رہائشی 39 سالہ لیفٹیننٹ کرنل علی اور تلہ گنگ کے رہائشی 23 سالہ کیپٹن محمد احمد بدر نے جام شہادت نوش کیا۔

50% LikesVS
50% Dislikes
WP Twitter Auto Publish Powered By : XYZScripts.com