اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور کے زیر اہتمام دسویں بین الاقوامی سیرت النبی ﷺکانفرنس کا انِقعاد وہیل چیئر ایشیا کپ: سری لنکن ٹیم کی فتح حکومت کا نیب ترمیمی بل کیس کے فیصلے پر نظرثانی اور اپیل کرنے کا فیصلہ واٹس ایپ کا ایک نیا AI پر مبنی فیچر سامنے آگیا ۔ جناح اسپتال میں 34 سالہ شخص کی پہلی کامیاب روبوٹک سرجری پی ایس او اور پی آئی اے کے درمیان اہم مذاکراتی پیش رفت۔ تحریِک انصاف کی اہم شخصیات سیاست چھوڑ گئ- قومی بچت کا سرٹیفکیٹ CDNS کا ٹاسک مکمل ۔ سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ کے خلاف دائر درخواستوں پر آج سماعت ہو گی ۔ نائیجیریا ایک بے قابو خناق کی وبا کا سامنا کر رہا ہے۔ انڈونیشیا میں پہلی ’بلٹ ٹرین‘ نے سروس شروع کر دی ہے۔ وزیر اعظم نے لیفٹیننٹ جنرل منیرافسر کوبطورچیئرمین نادرا تقرر کرنے منظوری دے دی  ترکی کے دارالحکومت انقرہ میں وزارت داخلہ کے قریب خودکش حملہ- سونے کی قیمت میں 36 ہزار روپے تک گر گئی۔ دنیا کے لیے بد صورت ترین مگر اپنے وقت کے بہترین کردار ضیاء محی الدین کی پہلی برسی "کپاس کی کاشت میں انقلابی تبدیلی وزیراعظم نے انتخابی نتائج میں تاخیر کے الزامات مسترد کر دیے بلوچستان کے علاقے پشین، قلعہ سیف اللہ میں دو بم دھماکے20 افراد جاں بحق جماعت اسلامی نے انتخابات میں دھاندلی کی صورت میں سخت مزاحمت کا انتباہ دے دیا کیا پی ٹی آئی خیبرپختونخوا کا قلعہ برقرار رکھ سکے گی؟ کراچی میں الیکشن کے انتظامات مکمل پی ٹی آئی کا 5 فروری کو نئے انٹرا پارٹی انتخابات کرانے کا اعلان الیکشن کمیشن نے 8 فروری کو عام تعطیل کا اعلان کر دیا

سندھ کےعلاقوں میں 1100 ملی میٹر تک بارش ہو چکی

یوتھ ویژن نیوز (یاسر ملک ) – سندھ کے علاقوں میں 1100 ملی میٹر تک بارش ہو چکی ہے۔ پورا سندھ دریا کا منظرپیش کرنے لگا۔

سندھ میں سیلابی صورتحال المیے کو جنم دینے لگی ہے۔ ضلع دادو میں پورے جوہی شہر کو خالی کرنے کا نوٹس دیدیا گیا ہے۔ محکمہ انہار نے میہڑ کے این شاہ اور جوہی شہروں کو انتہائی حساس قرار دیدیا ہے۔ حمل جھیل اور فریدآباد ایف پی بند پر بڑا شگاف پڑ گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیںسوات اورڈی آئی خان کےعلاقوں میں بارشوں نے تباہی مچا دی

پانی کا بہائو میہڑ کے این شاہ اور جوہی کی طرف تیزی سے بڑھ رہا ہے۔ جوہی شہر کی آبادی ایک لاکھ سے زائد ہے۔ تیس ہزار آبادی پہلے ہی نقل مکانی کر چکی ہے۔

حیدرآباد کی بات کریں تو یہاں پانی کی نکاسی انتظامیہ کیلئے چیلنج بن گیا ہے۔ شہر کے نشیبی علاقے تیسرے روز بھی برساتی پانی میں ڈوبے ہوئے ہیں۔ معمولات زندگی مفلوج ،پانی لوگوں کے گھروں میں موجود ہے۔

سکھر بیراج پر اونچے درجے کے سیلاب نے کچے کے علاقے میں تباہی مچا دی ہے۔ ہزاروں افراد نقل مکانی کر گئے ہیں۔ کھر شہر کا بھی براحال ہے، پانی کی نکاسی نہ ہونے کے باعث شہری شدید پریشان ہیں۔

دوسری جانب میرپورخاص اور جیکب آباد بھی بارش سے شدید متاثر ہیں۔ میرپورخاص کے اسپتال تک پانی سے بھرے ہوئے ہیں۔ بستیوں کی بستیاں زیر آب ہیں جبکہ جیکب آباد  میں برساتی پانی جانیں نگلنے لگا ہے۔ تحصیل گڑھی یاسیں میں گھروں کی چھتیں گرنے کے مختلف واقعات میں پانچ افراد جاں بحق اور دو زخمی ہو گئے ہیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں

WP Twitter Auto Publish Powered By : XYZScripts.com