اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور کے زیر اہتمام دسویں بین الاقوامی سیرت النبی ﷺکانفرنس کا انِقعاد وہیل چیئر ایشیا کپ: سری لنکن ٹیم کی فتح حکومت کا نیب ترمیمی بل کیس کے فیصلے پر نظرثانی اور اپیل کرنے کا فیصلہ واٹس ایپ کا ایک نیا AI پر مبنی فیچر سامنے آگیا ۔ جناح اسپتال میں 34 سالہ شخص کی پہلی کامیاب روبوٹک سرجری پی ایس او اور پی آئی اے کے درمیان اہم مذاکراتی پیش رفت۔ تحریِک انصاف کی اہم شخصیات سیاست چھوڑ گئ- قومی بچت کا سرٹیفکیٹ CDNS کا ٹاسک مکمل ۔ سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ کے خلاف دائر درخواستوں پر آج سماعت ہو گی ۔ نائیجیریا ایک بے قابو خناق کی وبا کا سامنا کر رہا ہے۔ انڈونیشیا میں پہلی ’بلٹ ٹرین‘ نے سروس شروع کر دی ہے۔ وزیر اعظم نے لیفٹیننٹ جنرل منیرافسر کوبطورچیئرمین نادرا تقرر کرنے منظوری دے دی  ترکی کے دارالحکومت انقرہ میں وزارت داخلہ کے قریب خودکش حملہ- سونے کی قیمت میں 36 ہزار روپے تک گر گئی۔ روس نے پیٹرول کی برآمدات پر 6 ماہ کے لیے پابندی عائد کر دی دنیا کے لیے بد صورت ترین مگر اپنے وقت کے بہترین کردار ضیاء محی الدین کی پہلی برسی "کپاس کی کاشت میں انقلابی تبدیلی وزیراعظم نے انتخابی نتائج میں تاخیر کے الزامات مسترد کر دیے بلوچستان کے علاقے پشین، قلعہ سیف اللہ میں دو بم دھماکے20 افراد جاں بحق جماعت اسلامی نے انتخابات میں دھاندلی کی صورت میں سخت مزاحمت کا انتباہ دے دیا کیا پی ٹی آئی خیبرپختونخوا کا قلعہ برقرار رکھ سکے گی؟ کراچی میں الیکشن کے انتظامات مکمل پی ٹی آئی کا 5 فروری کو نئے انٹرا پارٹی انتخابات کرانے کا اعلان

سپریم کورٹ میں "ایبسلوٹلی ناٹ” اور” کیا ہم غلام ہیں” کی گونج، وکیل قتل کیس میں ججز کے ریماکس

یوتھ ویژن نیوز : سپریم کورٹ میں وکیل قتل کیس میں عمران خان کی نامزدگی کیخلاف درخواست پر سماعت ہوئی۔ دوران سماعت  عدالت میں ایبسلوٹلی ناٹ کی گونج رہی۔ 

مدعی مقدمہ کے وکیل امان اللہ کنرانی نے بینچ میں شامل ججز پر اعتراض اٹھایا اور ان پر سنگین نوعیت کے الزامات  عائد کیے۔ جس کے بعد عدالت کی جانب سے شدید برہمی کا اظہار کرنے پر وکیل نے ہاتھ جوڑ کر معافی مانگ لی تاہم  تحریری معذرت سے انکار کردیا۔ 

یہ بھی پڑھیں: اسلام آباد ہائی کورٹ نے توشہ خانہ کیس میں عمران خان کی فوری سزامعطلی کی درخواست مسترد کر دی

جسٹس مظاہر نقوی نے وکیل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ کے رویے پر عدالت آپ کے خلاف کارروائی کرسکتی ہے۔  جس پر وکیل امان اللہ کنرانی نے کہا کہ معزز جج صاحبان ہم آپ کے غلام نہیں ہیں۔دوران سماعت امان اللہ کنرانی نے کہا میں ہاتھ جوڑ کر معافی مانگتا ہوں لیکن تحریری معافی نہیں مانگوں گا۔جسٹس مظاہر نقوی نے امان اللہ کنرانی سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ کو کیا ہدایات دے کر بھیجا گیا ہے ؟ ہم بے جان نہیں ہیں جھوٹے الزامات کا جواب دیں گے۔

جسٹس حسن اظہر رضوی نے کہا کہ میں توہین عدالت کا نوٹس جاری کروں گا۔ جس پر امان اللہ کنرانی نے کہا کہ میں  غلام نہیں ہوں۔ جسٹس مظاہر نقوی کا وکیل امان اللہ کنرانی سے استفسار کہ کیا ہم غلام ہیں ؟ جسٹس یحیٰی آفریدی  نے ریمارکس دیے کہ پہلے آپ معافی مانگیں پھر سماعت آگے بڑھے گی۔

امان اللہ کنرانی نے کہا کہ میں ہاتھ جوڑ کر غیرمشروط معافی مانگتا ہوں۔ جسٹس یحیٰی آفریدی نے کہا کہ میں امان اللہ کنرانی کی معافی قبول کرتا ہوں۔

یہ بھی پڑھیں: قومی اسمبلی تحلیل کرنے کی سمری تیارہوگئی،وزیراعظم ،صدرمملکت کو بھجوائیں گے

جسٹس مظاہر نقوی اور جسٹس حسن اظہر رضوی کا معافی قبول کرنے سے انکار:

جسٹس مظاہر نقوی نے کہا کہ میں امان اللہ کنرانی کی معافی قبول نہیں کرتا۔ جسٹس حسن اظہر رضوی نے ریمارکس دیے کہ اگر الزامات واپس لے رہے ہیں اور تحریری معافی مانگتے ہیں تو معاف کرنے کو تیار ہوں۔

جسٹس مظاہر نقوی نے جسٹس حسن اظہر رضوی سے سوال کیا کہ کیا آپ نے معاف کردیا؟ جسٹس حسن اظہر رضوی  نے ریمارکس دیے کہ ہم نے عزت سے وقت گزارا ہے الزامات واپس لے رہے ہیں تو معاف کر دیتا ہوں۔

جسٹس یحیٰی نے جسٹس مظاہر نقوی سے سوال کیا کہ کیا آپ وکیل کی معافی قبول کرتے ہیں تو جسٹس مظاہر نقوی نے جواب دیا کہ ایبسلوٹلی ناٹ۔

50% LikesVS
50% Dislikes
WP Twitter Auto Publish Powered By : XYZScripts.com