اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور کے زیر اہتمام دسویں بین الاقوامی سیرت النبی ﷺکانفرنس کا انِقعاد وہیل چیئر ایشیا کپ: سری لنکن ٹیم کی فتح حکومت کا نیب ترمیمی بل کیس کے فیصلے پر نظرثانی اور اپیل کرنے کا فیصلہ واٹس ایپ کا ایک نیا AI پر مبنی فیچر سامنے آگیا ۔ جناح اسپتال میں 34 سالہ شخص کی پہلی کامیاب روبوٹک سرجری پی ایس او اور پی آئی اے کے درمیان اہم مذاکراتی پیش رفت۔ تحریِک انصاف کی اہم شخصیات سیاست چھوڑ گئ- قومی بچت کا سرٹیفکیٹ CDNS کا ٹاسک مکمل ۔ سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ کے خلاف دائر درخواستوں پر آج سماعت ہو گی ۔ نائیجیریا ایک بے قابو خناق کی وبا کا سامنا کر رہا ہے۔ انڈونیشیا میں پہلی ’بلٹ ٹرین‘ نے سروس شروع کر دی ہے۔ وزیر اعظم نے لیفٹیننٹ جنرل منیرافسر کوبطورچیئرمین نادرا تقرر کرنے منظوری دے دی  ترکی کے دارالحکومت انقرہ میں وزارت داخلہ کے قریب خودکش حملہ- سونے کی قیمت میں 36 ہزار روپے تک گر گئی۔ بلوچستان واشک میں کوئٹہ جانے والی بس کھائی میں گرنے سے 28 افراد جاں بحق 22 زخمی حکومت نے بجٹ 2024-25 میں امیروں کے لیے ٹیکس معافی واپس لینے کی تجویز پر غور کرنا شروع کردیا طوفانی بارشوں کے بعد کان کے تباہ ہونے سے 12 بھارتی ہلاک ہو گئے نیوکلیئر پاور کے حوالے سے پاکستان کی 26 سالہ یادگاری تقریب۔ اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور میں آئندہ بجٹ پر انڈسٹری اور اکیڈمیا ڈائیلاگ پیشانی کو جھوٹی و خطاء کار کیوں کہا گیا؟ بہاولپور میں باپ کے ہاتھوں کمسن بچیاں قتل خانہ کعبہ کا سونے کا دروازہ ۔ رحمت کا پرنالا اور حجر اسود پر چاندی کا خول چڑھانے کے اعزاز بھی بہاولپور کے حصے میں آیا خانہ کعبہ کے دروازے اور حجر اسود کا خول تیار کرنے والی فیکٹری کے پاکستانی مالک خالق حقیقی سے جاملے امیر کویت اور امیر قطر نے وزیراعظم محمد شہباز شریف کی دورہء پاکستان کی دعوت کو قبول کر لیا

عمران خان نےعارف علوی کو ’اہم‘ کام سونپ دیا

عمران خان عارف علوی

عمران نے علوی کو ’اہم‘ کام سونپا

یوتھ ویژن : (مباشر بلوچ سے ) جیسا کہ پی ٹی آئی بظاہر 9 مئی کو ہونے والے تشدد کی پہلی برسی کے موقع پر ملک بھر میں بڑے ہجوم کو نکالنے میں ناکام رہی، سابق صدر اور پارٹی رہنما عارف علوی کو پارٹی سربراہ عمران خان نے بات چیت کے ذریعے "چیزوں کو حل کرنے” کی "اہم ذمہ داری” سونپی۔ بظاہر طاقتوں کے ساتھ۔

اس بات کا انکشاف سابق وزیراعظم سے جیل میں ملاقات کے بعد اڈیالہ جیل کے باہر پی ٹی آئی رہنماؤں بشمول قومی اسمبلی کے اپوزیشن لیڈر عمر ایوب، عارف علوی اور پی ٹی آئی کے ترجمان رؤف حسن نے پریس کانفرنس کے دوران کیا۔

پی ٹی آئی نے مسٹر علوی کو تفویض کردہ ‘اہم’ کام کی تفصیلات شیئر نہیں کیں، لیکن سابق صدر نے ریاست کے سربراہ کی حیثیت سے اپنے دور میں عمران خان اور ملٹری اسٹیبلشمنٹ کے درمیان دراڑ کو ختم کرنے کی متعدد کوششیں کیں۔ اپنی میڈیا ٹاک میں انہوں نے کہا کہ بات چیت ہونی چاہیے۔ تاہم، انہوں نے دعویٰ کیا کہ حکمران اتحاد میں شامل سیاسی جماعتوں کے پاس ’’حقیقی طاقت نہیں ہے‘‘۔

عمران خان کا عارف علوی کو پیغام

اس سوال کے جواب میں کہ پی ٹی آئی حکمران جماعتوں کے علاوہ کسی اور سے کیوں بات کرنا چاہتی ہے، سابق صدر نے جواب دیا، ’’آپ لوگ جانتے ہیں کہ پاکستان میں اقتدار کس کا ہے‘‘۔ "یہ سیاسی جماعتیں فارم 47 میں ملوث ہیں اور ان کا حکومت سے کوئی تعلق نہیں ہے…” انہوں نے مخلوط حکومت کے حوالے سے واضح طور پر کہا۔

پی ٹی آئی کے ترجمان نے کہا کہ پارٹی مسلم لیگ ن، پی پی پی اور متحدہ قومی موومنٹ پاکستان سے بات نہیں کرے گی کیونکہ وہ مبینہ مینڈیٹ چوری کے مبینہ فائدہ اٹھانے والے تھے۔

مسٹر علوی کے مطابق، انہوں نے ماضی میں بھی معاملات کو حل کرنے کی کوشش کی تھی اور اب بھی وہ ملک کی خاطر ایسا ہی کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

مروت نے دروازہ دکھایا

پی ٹی آئی کے ہاک شیر افضل مروت کو کور کمیٹی اور پولیٹیکل کمیٹی سے نکال دیا گیا تھا اور ان کی جگہ آزاد کشمیر کے سابق وزیر اعظم عبدالقیوم نیازی کو سیاسی کمیٹی میں شامل کیا گیا تھا۔

واضح طور پر یہ فیصلہ مسٹر مروت کے اس دعوے کی روشنی میں سعودی عرب کے ساتھ تعلقات کو بہتر بنانے کے لیے کیا گیا تھا کہ سعودی ولی عہد پی ٹی آئی کے بانی کی بے دخلی میں ملوث تھے۔

ایوب نے میڈیا کو بتایا کہ "عمران خان نے بار بار شیر افضل مروت کو پارٹی پالیسیوں پر عمل کرنے کی ہدایت کی۔”

عمران خان نے کہا کہ شیر افضل مروت نے گمراہ کن بیانات کے ذریعے عمران خان کے سعودی عرب اور محمد بن سلمان کے تعلقات کو پٹری سے اتار دیا۔

مسٹر ایوب نے کہا کہ پی ٹی آئی کے بانی نے سیاسی کمیٹی کو مروت کے خلاف تادیبی کارروائی کرنے کا فیصلہ کرنے کی ہدایات بھی دیں۔ انہوں نے کہا کہ انہیں شوکاز جاری کیا جائے گا۔

پی ٹی آئی کے کارکنوں کو حراست میں لے لیا گیا۔

کراچی، لاہور اور پشاور سمیت ملک کے مختلف حصوں میں پی ٹی آئی کے حامی سڑکوں پر نکل آئے لیکن ان کے مظاہروں کو پولیس نے بغیر کسی کوشش کے ناکام بنا دیا۔ اسلام آباد میں پولیس نے چار افراد کو حراست میں لے لیا جبکہ راولپنڈی پولیس نے سابق ایم پی اے سمیت 15 سے زائد حامیوں کو حراست میں لے لیا۔

لاہور، اوکاڑہ اور فیصل آباد سے چھوٹے اجتماعات کی اطلاعات موصول ہوئیں، جہاں چند درجن کارکن پی ٹی آئی کے خلاف کریک ڈاؤن کے خلاف احتجاج کرنے کے لیے یا تو سڑکوں پر نکل آئے یا نجی احاطے میں جمع ہوئے۔

لاہور میں جی ٹی پر چھوٹا جلوس نکالا گیا۔ سڑک لیکن وہ بھی تیزی سے ختم ہو گئی۔

سیالکوٹ میں پی ٹی آئی رہنما اور عثمان ڈار کی والدہ ریحانہ ڈار نے ریلی نکالنے کی کوشش کی تاہم پولیس نے انہیں کچھ دیر کے لیے پکڑ لیا۔ تاہم پولیس نے دعویٰ کیا کہ محترمہ ڈار نے پولیس موبائل میں بیٹھ کر خود کو گرفتاری کے لیے رضاکارانہ طور پر پیش کیا۔

پشاور میں پی ٹی آئی نے عمران خان، ان کی اہلیہ بشریٰ بی بی اور پی ٹی آئی کارکنوں کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا۔ صوبائی دارالحکومت کے علاوہ صوابی، شانگلہ، باجوڑ، مہمند اور جنوبی وزیرستان میں بھی پی ٹی آئی کے کارکنوں نے ریلیاں نکالیں۔

کراچی میں پی ٹی آئی نے 18 مقامات پر احتجاجی مظاہرے کیے جن میں زیادہ سرگرمی نظر نہیں آئی۔ تاہم، پولیس نے 23 حامیوں کو حراست میں لے لیا، جن میں تین خواتین بھی شامل تھیں، کیونکہ انہوں نے شہر بھر میں مظاہروں کو توڑ دیا۔

کراچی میں عمران ایوب، راولپنڈی میں محمد اصغر، اسلام آباد میں منور عظیم، پشاور میں عمر فاروق اور لاہور میں احمد فراز خان نے بھی اس رپورٹ میں تعاون کیا۔

یوتھ ویژن نیوز میں 10 مئی 2024 کو شائع ہوا۔

50% LikesVS
50% Dislikes
WP Twitter Auto Publish Powered By : XYZScripts.com