اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور کے زیر اہتمام دسویں بین الاقوامی سیرت النبی ﷺکانفرنس کا انِقعاد وہیل چیئر ایشیا کپ: سری لنکن ٹیم کی فتح حکومت کا نیب ترمیمی بل کیس کے فیصلے پر نظرثانی اور اپیل کرنے کا فیصلہ واٹس ایپ کا ایک نیا AI پر مبنی فیچر سامنے آگیا ۔ جناح اسپتال میں 34 سالہ شخص کی پہلی کامیاب روبوٹک سرجری پی ایس او اور پی آئی اے کے درمیان اہم مذاکراتی پیش رفت۔ تحریِک انصاف کی اہم شخصیات سیاست چھوڑ گئ- قومی بچت کا سرٹیفکیٹ CDNS کا ٹاسک مکمل ۔ سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ کے خلاف دائر درخواستوں پر آج سماعت ہو گی ۔ نائیجیریا ایک بے قابو خناق کی وبا کا سامنا کر رہا ہے۔ انڈونیشیا میں پہلی ’بلٹ ٹرین‘ نے سروس شروع کر دی ہے۔ وزیر اعظم نے لیفٹیننٹ جنرل منیرافسر کوبطورچیئرمین نادرا تقرر کرنے منظوری دے دی  ترکی کے دارالحکومت انقرہ میں وزارت داخلہ کے قریب خودکش حملہ- سونے کی قیمت میں 36 ہزار روپے تک گر گئی۔ دنیا کے لیے بد صورت ترین مگر اپنے وقت کے بہترین کردار ضیاء محی الدین کی پہلی برسی "کپاس کی کاشت میں انقلابی تبدیلی وزیراعظم نے انتخابی نتائج میں تاخیر کے الزامات مسترد کر دیے بلوچستان کے علاقے پشین، قلعہ سیف اللہ میں دو بم دھماکے20 افراد جاں بحق جماعت اسلامی نے انتخابات میں دھاندلی کی صورت میں سخت مزاحمت کا انتباہ دے دیا کیا پی ٹی آئی خیبرپختونخوا کا قلعہ برقرار رکھ سکے گی؟ کراچی میں الیکشن کے انتظامات مکمل پی ٹی آئی کا 5 فروری کو نئے انٹرا پارٹی انتخابات کرانے کا اعلان الیکشن کمیشن نے 8 فروری کو عام تعطیل کا اعلان کر دیا

میرے سینے میں بھی بہت راز دفن ہیں، وزیراعظم کا سنیٹ میں اظہار خیال

وزیراعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ زندگی میں کبھی ایسے مخدوش حالات نہیں دیکھے، عدلیہ سمیت ہر ادارہ تقسیم ہوچکا، اداروں کی بے توقیری کی جارہی ہے۔ہم گزشتہ نو ماہ سے مشکلات کا سامنا کررہے ہیں، میرے سینے میں بھی بہت راز دفن ہیں، معاشی استحکام کے لیے سیاسی استحکام ضروری ہے۔

سینیٹ کے خصوصی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ بڑا انسان وہ ہوتا ہے جو اپنی غلطی تسلیم کرے، ماضی میں شدید اختلافات کے باوجود تمام سیاست دان پاکستان کے مفاد میں اکٹھے ہوجاتے تھے، 2014ء میں پاکستان میں دہشت گردی عروج پر تھی اس وقت کے وزیراعظم نے ایپکس کمیٹی میں تمام سیاست دانوں کو اکٹھا کیا اور سانحہ اے پی ایس میں بھی سب سیاست دان اکٹھے ہوگئے تھے۔

وزیراعظم نے کہا کہ فروری 2019ء میں بھارتی طیارے پاکستانی حدود میں داخل ہوئے، میری کمر کی تکلیف کا مذاق اڑایا گیا، اس وقت ایک اہم میٹنگ بلائی گئی تھی جس میں وزیراعظم اور آرمی چیف کو آنا تھا، ہم نے اس وقت ڈیڑھ گھنٹہ انتظار کیا مگر جنرل باجودہ اکیلے آئے، ہم سب سمجھ گئے تھے لیکن اس وقت بھی وزیراعظم ( عمران خان ) نہیں آئے اسے کہتے ہیں انا۔

  انہوں نے کہا کہ آج سیاست دان کا لفظ گالی بن چکا ہے، آج پاکستان کے اندر نظام کو تہہ و بالا کرنے کے لیے آخری دھکا نہیں لگایا جارہا، میں نے زندگی میں کبھی ایسے مخدوش حالات نہیں دیکھے، عدلیہ سمیت ہر اداروں کی تقسیم ہے، اداروں کی بے تو قیری کی جارہی ہے

وزیر اعظم نے کہا کہ نیب کے قوانین میں آرڈیننس کے ذریعے تبدیلی لائی جارہی تھی، ریٹائڑڈ ججز کو نیب میں لگایا جارہا تھا، پلان تھا کہ لوگوں کو دس یا 20 سال تک جیلوں میں ڈالا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ ہم گزشتہ نو ماہ سے مشکلات کا سامنا کررہے ہیں، میرے سینے میں بھی بہت راز دفن ہیں، معاشی استحکام کے لیے سیاسی استحکام ضروری ہے، وزیر خزانہ پوری کوشش کررہے ہیں کہ مشکلات سے نکل سکیں، ہم نے آئی ایم ایف کی تمام شرائط پوری کردی ہیں، آئندہ چند دنوں میں اسٹاف لیول معاہدہ اور پھر معاملہ بورڈ میں چلے جانا چاہیے۔

شہباز شریف نے کہا کہ اس میں ان کا بھی قصور ہے کہ جو شوروغل کررہے تھے، آئی ایم ایف نے ابھی تک سیاسی عدم استحکام کی کوئی بات نہیں کی۔

غیرملکی میڈیا کے مطابق عراق کے شمالی صوبے دحوک میں ایک ہیلی کاپٹر آئل فیلڈ کے قریب گر کر تباہ ہوگیا، واقعے میں کم از کم 7 افراد ہلاک ہوئے ہیں

50% LikesVS
50% Dislikes
WP Twitter Auto Publish Powered By : XYZScripts.com