گمراہ کن اشتہار کامعاملہ،عدالت نےفیس بک پرجرمانہ عائد کردیا

یوتھ ویژن نیوز (ویب ڈسک )بھارت کی بمبئی ہائیکورٹ نے  گمراہ کن اشتہار کے معاملے پر فیس بک کو 25 ہزار روپے سے زائد جمع کرانے کا حکم دے دیا۔

یہ بھی پڑھیں؛ چیف سیکرٹری پنجاب چھٹیوں پر چلے گئے

انڈیا میڈیاکے مطابق  بمبئی ہائیکورٹ کے  ناگپور بنچ نے صارفین کے ازالے کے کمیشن کے اس فیصلے پر حکم امتناع جاری کردیا ہے جس میں فیس بک کو ہدایت کی گئی تھی کہ وہ آن لائن خریدی گئی پراڈکٹ کی ڈیلیوری نہ کرنے اور دھوکہ دہی سے اشتہار دینے پر ایک شخص کو 25,599 روپے ادا کرے۔ ہائیکورٹ نے فیس بک کو یہ رقم ہائیکورٹ  رجسٹری میں جمع کرانے کا حکم دیا ہے۔خیال رہے کہ فیس بک انڈیا آن لائن سروسز اور میٹا پلیٹ فارمز انکارپوریشن نے کمیشن کے جون 2022 کے حکم کو چیلنج کرتے ہوئے بمبئی ہائیکورٹ کے  ناگپور بنچ سے رجوع کیا تھا۔

ڈسٹرکٹ کنزیومر ڈسپیوٹ ریڈریسل کمیشن نے غلط پراڈکٹ پہنچنے پر فیس بک کو حکم دیا تھا کہ وہ صارف کو 599 روپے ادا کرے۔ کمیشن نے صارف کو قانونی اخراجات اور ذہنی صدمے کے ہرجانے کے طور پر مزید 25 ہزار روپے دینے کا بھی حکم دیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: 30 اشیائےضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ

واضح رہے کہ ایک صارف نے فیس بک پر اشتہار دیکھ کر جوتوں کا آرڈر دیا تھا لیکن ڈیبٹ کارڈ کے ذریعے ادائیگی کے باوجود اسے ڈلیوری نہیں دی گئی تھی جس پر اس نے کمیشن سے رجوع کیا تھا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں

WP Twitter Auto Publish Powered By : XYZScripts.com