دعا زہرہ کی قابل اعتراض تصاویرسوشل میڈیا پر وائرل، ظہیر کی والدہ کا تہلکہ خیزانٹرویو

 دعا زہرا کی قابل اعتراض تصاویر شئیر کرنے پر ظہیر کی والدہ تنقید کی زد میں آگئیں۔ اپنے حالیہ انٹرویو میں  ظہیر کی  والدہ نے اپنے بیٹے اور دعا زہرہ کی قابل اعتراض تصاویر شیئر  کرنے کا اعتراف بھی  کرلیا ہے۔

 سوشل میڈیا پر نجی ٹی چینل کی جانب سے ظہیر کی والدہ کے انٹرویو کی ایک ویڈیو وائرل ہورہی ہے جس میں اعتراف کیا کہ ظہیر اور زہرا کی قابل اعتراض تصاویر میں نے شیئر کیں ہیں، ظہیر کی والدہ نے کہا کہ بچی اکیلی کراچی سے لاہور آئی ہے وہ بالغ ہے شادی کی ہے کوئی گناہ نہیں کیا، میرے بیٹے نے بھی غصے سے اس کو کہا کہ تم واپس چلی جاؤ گھر سے بھاگ کر غلط کیا۔

زہرا نے نکاح ہوتے ہی ایک تصویر اپنے والدین کو واٹس ایپ کی جس سے لاعلمی کا اظہار کرتے ظہیر کی ماں نے کہا مجھے اس بارے کچھ نہیں پتہ۔ 

خاتون کا کہناتھا کہ دعا زلرہ اکیلی کراچی سے لاہور یونیورسٹی کے لئے آئی، ہم نے 22 ہزار ٹیکسی والے کو دیا اور نکاح کرانے والے وکیل کو 1 لاکھ روپے دیے، بچوں کی محبت ہے اور مجھے یہ معاملہ بالکل بھی پسند نہیں میں نے زہرا سے پہلے کوئی رابطہ نمبر مانگا مگر اس نے کوئی نہیں دیا اور نکاح کے 15 دن بعد اس نے ہمیں نمبر دیا۔

ظہیر کی والدہ نے مزید کہا  میری کوئی بیٹی نہیں مگر اب دعا میری بیٹی ہے۔ 12 سال قبل میرے خاوند کا انتقال ہوا سب لوگوں نے ہمیں گینگ کہا ۔ میں بہت پریشان ہوں ہم ایسے نہیں ہیں، بچی خود اپنی مرضی سےآئی ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں

WP Twitter Auto Publish Powered By : XYZScripts.com