امریکی وزیر خزانہ بیان، واشنگٹن کو روس کے اثاثے سیل کرنے کا کوئی حق نہيں

امریکا کا کہنا ہے کہ واشنگٹن کو روس کے سینٹر بینک کے اثاثوں کو سیل کرنے کا کوئی حق نہيں ہے۔

رپورٹ کے مطابق امریکا کی وزیر خزانہ نے کہا ہے کہ روسی اثاثوں کو روکنا غیر قانونی ہے اور امریکا کو روس کے سینٹرول بینک کے اثاثے سیل کرنے کا کوئی حق نہيں ہے۔

جینیٹ یلین نے کہا کہ روس کی جانب سے یوکرین کے خلاف جنگ کی شروعات کی وجہ سے امریکا کو روس کے سینٹرل بینک کے اثاثوں کو سیل کرنے کا کوئی حق نہيں ہے تاہم امریکی اتحادیوں سے اس بارے میں مذاکرات جاری ہے کہ یوکرین کی تعمیر نو کا خرچہ روس سے کیسے وصول کیا جائے۔

امریکی وزیر خزانہ نے کہا کہ روس نے 24 فروری کو یوکرین پر حملہ کیا تھا اور یہی موضوع اس ہفتے جی-7 کے وزرائے خزانہ کے اجلاس کا اصلی مسئلہ ہوگا اور ان ممالک کے حکام اس بات کی کوشش میں ہیں کہ وہ روس کو اس بات کے لئے مجبور کریں کہ وہ یوکرین میں ہونے والے نقصانات کی تلافی کرے۔

جینیٹ یلین نے اسی طرح چین کے تعلق سے کہا کہ محسوس یہ ہو رہا ہے کہ کورونا وائرس سے نمٹنے کے لئے چین نے جو سخت پالیسی اختیار کی ہے وہ اشیاء کی پیداوار کی جانب ایک اہم رکاوٹ بن گئی ہے اور یہ موضوع خرچے میں اضافے اور اقتصادی رونق میں کمی کا سبب بنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ چین کی اقتصادی کارکردگی، عالمی اقتصاد کی ترقی میں اہم اثر رکھتی ہے۔

واضح رہے کہ جنگ یوکرین کو تین مہینے پورے ہونے میں صرف کچھ دن ہی باقی بچے ہیں اور اس جنگ سے اب تک دونوں فریق کو سیکڑوں عرب ڈالر کا نقصان ہو چکا ہے اور روس نے امریکا اور مغربی ممالک کو خبردار کیا ہے کہ یوکرین کے لئے ہتھیاروں کی ترسیل، تنازع کو طولانی کرنے اور خطرناک نتائج کا سبب بنے گا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں

WP Twitter Auto Publish Powered By : XYZScripts.com